صفحات

ہفتہ، 30 اگست، 2014

فقہ حنفی میں وطی فی الدبر کی حد اور غیر مقلدین کا دھوکہ

فقہ حنفی میں وطی فی الدبر کی حد اور غیر مقلدین کا دھوکہ

غیر مقلدین نے یہ حوالہ بھی ہمیشہ کی طرح خیانت کرتے ہوئے ادھورا پیش کیا۔ اس حوالہ میں واضح لکھا ہے کہ امام ابو حنیفہؒ کے نزدیک لواطت کرنے پہ فاعل اور مفعول دونوں پہ تعزیر ہو گی لیکن غیر مقلدین نے دھوکہ دیتے ہوئے تعزیز کا لفظ نقل ہی نہیں کیا اور اپنی مرضی سے ترجمہ کر دیا کہ فقہ حنفی میں اس کی کوئی سزا نہیں۔۔

امام ابو حنیفہ کے نزدیک لوطی پہ تعزیر ہے اس بات کا اعتراف غیر مقلد کے نواب صدیق حسن خان نے بھی کیا ہے کہ امام صاحبؒ کے نزدیک حد نہیں بلکہ تعزیر ہے( روضۃ الندیہ،صفحہ 261)

یہ تعزیر صرف امام ابو حنیفہؒ کا مذھب نہیں بلکہ غیر مقلد عبدالرحمان مبارکپوری کے نزدیک امام ابو حنفیہؒ اور امام شافعی کے ایک مذھب کے مطابق لوطی پہ صرف تعزیر لگائی جائےاور ان کا استدلال حدیث سے ہے۔(تحفۃ الاحوذی،کتاب الحدود)

علامہ ابن تیمیہؒ کے نزدیک بھی جس نے بھی بیوی کی دبر میں وطی کی اوربیوی نے بھی اس کی اطاعت کی تودونوں کوتعزیر لگائی جاۓ گی ، اوراگر تعزیر کے بعد بھی وہ باز نہ آئيں توجس طرح فاجراورجس کے ساتھ فجور کا ارتکاب کیا گیا ہوان کے درمیان علیحدگی کردی جاتی ہے(فتاوی ابن تیمیہ،جلد3 صفحہ 103،104)
ہے کسی غیر مقلد میں ہمت جو علامہ ابن تیمیہؒ پہ وہی فتوی لگائے جو احناف پہ لگاتے ہیں؟؟؟

ابن تیمیہؒ کی اس تعزیر کا حکم غیر مقلدین کے محدث فتاوی کی ویب سائٹ پہ بھی موجود ہے اور غیر مقلدین کے محدث فتاوی کی کمیٹی کے مطابق بھی اگر خاوند اپنی بیوی کے ساتھ دبرمیں وطی کرنے پر اتفاق کرلیں اور تعزير لگاۓ جانے کے باوجود بھی باز نہ آئيں توان دونوں کے درمیان علیحدگی کردی جائے گی ۔


غیر مقلدو! امام ابو حنیفہؒ تعزیر کہیں تو تم ان پہ حدیث کی مخالفت کا الزام لگاتے ہو تو اگر ہمت ہے تو علامہ ابن تیمیہؒ پہ بھی حدیث کی مخالفت کا الزام لگاؤ کہ ان کے نزدیک بھی لوطی کے لئے فقط تعزیر ہے اور بقول عبدالرحمان مبارکپوری امام ابو حنیفہؒ اور امام شافعی کے نزدیک تعزیر ہے اور ان کااستدلال حدیث سے ہے تو پھر امام شافعیؒ پہ بھی اس تعزیر پہ کیا فتوی لگے گا؟؟؟ 

غلامِ خاتم النبیین ﷺ
محسن اقبال