صفحات

ہفتہ، 24 جنوری، 2015

امام ابو حنیفہؒ پہ حدیث کی مخالفت کے الزام کا جواب غیر مقلدعالم یحییٰ گوندلوی کی زبان سے


غیر مقلدین اکثرامام ابو حنیفہؒ پہ الزام لگاتے ہیں کہ امام ابو حنیفہؒ احادیث کو رد کرتے تھے یا حدیث کی مخالفت کرتے تھے ۔
غیر مقلدین کے اس الزام کا جواب غیر مقلدین کے عالم یحییٰ گوندلوی نے اپنی کتاب ''دوام حدیث'' میں تفصیل سے دیا ہے۔
یحییٰ گوندلوی اپنی کتاب میں ''امام ابو حنیفہؒ اور حدیث کے متعلق ان کے اقوال'' کا عنوان دے کر لکھتے ہیں کہ '' امام ابو حنیفہؒ حدیث کو اسی طرح مانتے تھے جس طرح دوسرے ائمہ مانتے ہیں۔۔۔ بعض جگہ امام ابو حنیفہؒ سے بعض احادیث کے متعلق الفاظ مروی ہیں کہ یہ حدیث ''رجز'' یا ''ہذیان'' ہے یہ سراسر غلط ہے۔۔۔ ان کی سندیں صحیح نہیں۔۔ اسی کتاب میں لکھتے ہیں کہ ''امام بخاریؒ نے امام ابو حنیفہؒ کو جو ''ضعفاء'' میں شمار کیا ہے اس کی وجہ یہ نہیں کہ امام صاحب حدیث کو رد کر دیتے تھے بلکہ اس لئے ضعیف کہا ہے کہ محدثین کو جس قسم کے حافظہ کی ضرورت ہوتی ہے ان کے خیال میں وہ اس معیار پہ پورئ نہیں اترتے۔حافظ ابن حجرؒ نے یہ فیصلہ فرمایا ہے کہ امام ابو حنیفہؒ کو ثقہ کہنے والے جرح کرنیوالوں سے ذیادہ ہیں۔۔ امام ابو حنیفہ حدیث کے متبع ہیں''۔(دوام حدیث،جلد 1 صفحہ 329 تا 339)
تو یحییٰ گوندلوی کے ان حوالوں سے ثابت ہو گیا کہ امام ابو حنیفہؒ پہ حدیث کی مخالفت اور حدیث کو رد کرنے کا الزام لگانا غلط ہے۔ 
یحییٰ گوندلوی کا یہ حوالہ غیر مقلدین کے لئے لمحہ فکریہ ہے۔ 
غلامِ خاتم النبیین ﷺ،
محسن اقبال